AskAhmadiyyat

ضیائے حدیث کے مضمون چالیس جھوٹ کا جواب

تعارف مضمون

ماہنامہ ”ضیاء حدیث“لاہور اپریل مئی/2009ء کے شمارے میں ایک صاحب کا دس صفحات کا مضمون شائع ہواجس کا عنوان”مرزا قادیانی کے 40 جھوٹ“تھا۔جس میں بانی سلسلہ احمدیہ حضرت مرزا غلام احمد قایانی  علیہ الصلوٰۃ والسلام پر نعوذ باللہ جھوٹ بولنے کے الزامات لگا ئے گئے۔یہاں ان بے سرو پا اعتراضات کے جوابات پیش کئے جارہے ہیں۔

سورة مومنون کی آیت نمبر45میں اللہ تعالیٰ فرماتا ہے۔کُلَّمَاجَآءَ اُمَّةً رَّسُوْلُھاکَذَّبُوْہُ۔جب بھی کسی امت کی طرف سے اس کا رسول آیا تو انہوں نے اسے جھٹلایا۔ حضرت محمد مصطفی ﷺ جنہیں دعویٰ سے پہلے قریش مکہ صدوق کہہ کر پکارا کرتے تھے۔یعنی انتہائی سچا۔جب آپﷺ نے دعویٰ فرمایا تو کفار نے کیا کہاسورة ص کی آیت 5 میں اس بات کا تذکرہ ملتا ہے فرمایا قَالَ الْکَافِرُونَ ھٰذَا سَاحِرٌ کَذَّاب حضرت محمد مصطفی ﷺ کا انکار کرنے والے کہتے ہیں ھٰذَا سَاحِرٌ کَذَّاب ۔یہ نبوت کا دعویدار نعوذباللہ جادوگر ہے اور نہ صرف یہ کہ جھوٹا بلکہ کذّاب، انتہائی جھوٹا ہے۔پس انبیاء کے مخالفین کی ہمیشہ یہی روش رہی ہے کہ وہ انبیا ء کو جھوٹا قرار دیتے ہیں اور یہی روش حضرت بانیٴ سلسلہ احمدیہ کے اس مخالف نے اپنے اس مضمون میں دنیا کے سامنے کر دکھائی ہے۔

جو انسان مدعی رسالت ہو مگر جھوٹ کا ارتکاب کر رہا ہو۔افتراء کا مظاہرہ کر رہا ہو ۔اللہ تعالیٰ اسے دنیا میں کامیاب وکامران نہیں کیا کرتا ۔ جیسا کہ اللہ تعالیٰ سورة الانعام کی آیت نمبر 22میں فرماتا ہے وَمَنْ اَظْلَمُ مِمَّنِ افْتَرٰی عَلَی اللّٰہِ کَذِباً اَوْکَذَّبَ بِاٰیٰتِہ اِنَّہ لَایُفْلِحُ الظّٰلِمُوْنَ۔ اسی قرآنی اصول کے تحت خدا تعالیٰ کا حضرت مسیح موعودؑ کے ساتھ وہی سلوک رہا جو سچے انبیاء کے ساتھ تھا اور آپ کو فتح و نصرت کے وہ نظارے دکھائے جس کو آج بھی دنیا دیکھ رہی ہے اور قادیان کی گمنام بستی سے چلنے والا یہ قافلہ آج دنیا کے 209ممالک میں پہنچ چکا ہے۔

 

 

reply to 40 lies mentioned in zia e hadith magazine

 

We recommend Firefox for better fonts view.